Nakash 1 92

نیا پاکستان اور مذہبی اقلیتیں ، نکاش بھٹی

نکاش بھٹی پشاور
قائداعظم کی 11 آگست 1947 کی وہ تاریخی تقریر جس میں انہوں نے آنے والے وقت کیلئے پاکستان کو ایک سمت دی اور ملک میں بسنے والے تمام شہریوں کو برابری کا درجہ دیا، افسوس کہ آنے والی حکومتوں نے اسکو قصہ پارینہ بنا دیا، قیام پاکستان کے وقت مذہبی اقلیتیں ملک کا %39 فیصد تھیں لیکن وقت کی ستم ظریفی آج وہی %3 فیصد تک محدود ہو کررہ گئے ہیں (یہ اعدود وشمار کسں حد تک درست ہیں یہ ایک الگ بحث ہے) لیکن اس کمی کی بہت سے وجوہات ہیں جسں کی بنیادی وجہ اقلیتوں کے مسائل پر گزشتہ حکومتوں کی خاموشی اور ایوانوں میں انکی حقیقی نمائندگی کا نہ ہونا ہے۔

Nakash 3

25 جولائی 2018 کو ہونے والے عام انتخابات اور اسکے نتیجہ میں تشکیل پانے والی حکومت کو جہاں معاشی ،دفاعی اور خارجہ پالیسی کے بہت سے چیلنجز درپیش ہونگے ان میں سے ایک چلینج ملک میں بسنے والی اقلیتوں کے تحفظ اور ان کو انکے بنیادی حقوق کی فراہمی بھی ایک بڑ ے چلینج سے کم نہ ہوگا۔ اقلیتوں کو درپیش مسائل جن میں ان کیلئے انتخابی اصلاحات، تعلیمی اور جاب کوٹہ پر عمل درآمد، نصاب میں موجودہ نفرت انگیز مواد کی تبدیلی اور اقلیتی اکابرین کو موجودہ نصاب میں جگہ دینا، اور سب سے بڑھ کر انکو تحفظ کا احساس لانا تاکہ وہ اس ملک کی تعمیر اور ترقی میں بےلوث حصہ شامل کریں.

nakash bathi 3

بہت سے لوگ 2018 کے انتخابات کے نتیجہ میں آنے والی تبدیلی کو خوش آئین قرار دے رہے ہیں لیکن اقلیتوں کیلئے حقیقی تبدیلی تب ہی ممکن ہو گی جب ان کو درپیش مسائل حل ہونگے، اور ان کو اتنی ہی برابری دی جائے جسں کے وہ حقدار ہیں ، آئین کا آرٹیکل 36 اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کی ضمانت دیتا ہے لیکن اس پر عمل درآمد کون کروائےگا ۔ شاید اس سوال کے جواب ملنے میں تھوڑا وقت اور لگے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں