siraj ul haq 15

نئی حکومت نے مہنگائی سے آغاز کیا ہے‘سراج الحق

بہاول پور۔
امیرجماعت اسلامی پاکستان و سینٹرسراج الحق نے کہاہے کہ ملک میں قائم نئی حکومت نے عوام سے سو دن ایجنڈے کا آغاز عام پاکستانی کے استعمال کی چیزوں کو مہنگا کرکے کیا ہے لوگوں کو مہنگائی اور بے روزگاری سے نجات دینے کی بجائے قیمتوں کو بڑھا کر عام آدمی کی زندگی مزید مشکل بنا دی ہے مہنگائی سے غریب آدمی متاثر ہوا ہے جبکہ امیر طبقے پر کوئی فرق نہیں پڑا ہر آنے والی نئی حکومت عوام کو پہلے سے زیادہ پریشان کرتے ہیں وزیر خزانہ کی بات سن کر عوام مزید پریشان ہوچکے ہیں۔

موجودہ صورت حال سے معلوم ہوتا ہے کہ حکومت آئی ایم ایف کی طرف جائے گی حکومت کے سو دنوں میں سے کافی دن گزر گئے لیکن حکومت کی رفتار سے معلوم ہوتا ہے کہ حکومت اپنے اس ایجنڈے کو پورا نہیں کرپائیں گی وہ بہاولپورمیں ورکرکنونشن سے خطاب کے بعد میڈیاسے بات چیت کر رہے تھے۔سراج الحق نے کہا کہ کوئی بھی وزیر خارجہ ہو، اسے وہی موقف اختیار کرنا پڑیگا جو پوری قوم کا ہے بھارت کے جارحانہ رویے سے پورے خطے کے امن کو خطرہ ہے بھارت کو اپنا نقطہ نظر بدلنا ہوگا۔

اقوام متحدہ کو بھارت کے ایسے متکبرانہ رویے کا احتساب کرنا چاہییے بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کا کا موقف دلیل پر مبنی نہیں بھارت کو ہر حال میں کشمیر سے نکلنا پڑیگا قوم یہی چاہتی ہے کہ کشمیر پر قبضے کو کسی صورت برداشت نہیں کرینگے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے میڈیا سے گفتگوکے دوران کہا کہ حکومت کا آغاز عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مہنگائی کرکے کیا۔

عام لوگوں کی امیدوں پر پورا اترنے کی بجائے مہنگائی کا طوفان کھڑا کرکے حکومت نے قوم کو مایوس کیاایک مخصوص طبقہ ہر دور میں خوشحال رہتا ہے جبکہ یہاں کا محکوم طبقہ آج بھی پریشان ہیں وزیر خزانہ نے بائی پاس کا کہہ کر پریشان کردیا کہ کہیں مریض جاں سے ہی نہ جائے سودی نظام اسلامی نظام کیساتھ نہیں چل سکتاسودنوں میں سے کافی دن بیت گئے لگتا ہے حکومت اپنا دعوا پورا نہیں کرسکے گی۔

انھوں نے کہا کہ بھاولپور ماضی کا خوشحال علاقہ اور صوبہ تھا اسکی بحالی کا وعدہ پورا کیا جائے ریاست بہاولپور کے پاکستان پر بڑے احسانات ہیں صوبہ بہاولپور کی بات کو پس پشت ڈالا جارہا ہے صوبہ بہاولپور بنانا نہیں ہے بلکہ بحال کرنا ہے قبل ازیں سراج الحق نے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں مغربی کلچر کو فروغ دیا جا رہا جس کی وجہ سے نوجوان نسل اپنے بزرگوں سے دور ہو رہے ہیں اور ملک میں کتے اور بلیاں پالنے کے رجحان میں اضافہ ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی تمام مذاہب کی مقدس ترین ہستیوں کے توہین آمیز خاکوں کے خاتمہ کے لیے بین الاقوامی سطح پر آواز بلند کر رہی ہے اس سلسلہ میں چند روز قبل اسلام آباد میں جیورسٹ کانفرنس منعقد کرائی گئی جس میں سابق چیف جسٹس افتخار محد چوہدری،اسد اللہ بھٹو،ضیاء الدین انصاری سمیت چار افراد پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے ۔

جو مقدس ہستیوں کے توہین آمیزخاکوں کے خاتمہ ک لیے لائحہ عمل طے کریں گی اور جنوری 2019 ء کے پہلے ہفتے میں جنیوا اور لندن میں عالمی کانفرنس منعقد کرائی جا ئے گی جس میں تمام ممالک کے نمائندوں کو مدعو کیا جائے گا اور۴ توہین آمیز خاکوں کے خاتمہ کے لیے متفقہ لائحہ عمل طے کرکے اس کو یواین او کے چارٹر میں شامل کرایا جا ئے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں