school teacher 25

ٹیکنالوجی کے بے دریغ استعمال نے طلباء کو بے ادب بنا دیا ہے ، اساتذہ کا اظہار خیال

والدین کی غلط ’’ سپورٹ ‘‘ اور ٹیکنالوجی کے بے دریغ استعمال نے طلباء کو بے ادب بنا دیا ھے اساتذہ کا فورم میں اظہار خیال
پشاور( نسرین جبین)
اساتذہ رول مڈل ہوا کرتے تھے لیکن والدین کی غلط ’’ سپورٹ ‘‘ اور ٹیکنالوجی کا بے دریغ استعمال طلباء کو بے ادب بنا رہاہے ٹیکنالوجی نے والدین ، طلباء اور اساتذہ کو متاثر کیاہے والدین کے پاس وقت کی کمی ، اچھی تربیت کا فقدان ، مشتر کہ خاندانی نظام کے خاتمےاور دولت کی ہوس نے معاشرے میں ادب و آداب ، قوت برداشت ، اخلاقیات اور اقتدار پر اثر ڈالا جس سے طلباء بھی متاثر ہوئے جس نے بلواسطہ طور پر اساتذہ کی عزت اور ادب و احترام کا عنصر طلباء میں کم کر دیا ہے .

patti

ان خیالات کااظہار مرد و خواتین اساتذہ اور تعلیمی اداروں سے منسک افراد ارم عائشہ ، سحرش ماجد ، مریم ، کومل ، نوشین ، گل سانگہ ، سعدیہ گل ، ہما ، غزالہ ، انور علی ، حسن اور احمدنے کیا ، اساتذہ روحانی والدین ہوتے ہیں لہٰذا والدین ہی بچوں و اساتذہ کااحترام سکھائیں نجی تعلیمی اداروں میں یہ خصوصیات نسبتاً زیادہ ہیں والدین فیسیں دیکر اپنے اساتذہ کا ادب و احترام کاحق نہیں خرید سکتے لیکن عملی طور پر وہ اپنے بچوں کی غلط سمت میں حمایت کر کے اساتذہ کااحترام کم کر دیتے ہیں اساتذہ ہمیشہ اپنے طلباء کابھلا سوچتے ہیں والدین خود بھی اساتذہ کااحترام کریں اور بچوں کو بھی تربیت دیں۔

انہوں نے کہاکہ آج کے دور کے طلباء بڑی کلاسوں میں جا کر جذباتی ہو جاتے ہیں اور اساتذہ کو احترام نہیں دیتے جو کہ ان کاحق ہے تاہم اگر امتحانات میں اخلاقیات کے نمبر بھی نتائج میں شامل کئے جائیں تووالدین اور طلباءاس بات کاخیال رکھیں گے کہ ہمیں اساتذہ کااحترام اور کلاس میں اخلاقیات کامظاہر ہ کرنا ہے انہوںنے کہاکہ والدین بچوں کے ساتھ اچھا رویہ رکھیں ان کی بہتر تربیت کریں انہیں وقت دیں ان کی حرکات و سکنات اور دوست احباب پر چیک اینڈ بیلنس رکھیں تو معاشرہ سنور سکتاہے جس میں نوجوان اور طلباء بھی شامل ہیں

دولت کی زیادتی اور غلط استعمال نوجوانوں کو جن میں طلباء بھی شامل ہے بگاڑ رہی ہے جو اساتذہ کا احترام کرتے وہ اپنے والدین کااحترام بھی نہیں کر سکتے اس لئے اپنے بچوں کی تربیت اس بنیاد پر کی جائے کہ اپے سے بڑوں کا ادب و احترام کرو۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں