amrood 5

شوگر کے مریض امرود لازمی کھائیں

ویب ڈیسک
سردیاں آنے کو ہیں ، اپنی سوغات لانے کو ہیں، سردیوں کا ہلکے سبز رنگ کا ، ہلکا میٹھاپھل امرود اپنا ایک منفرد مقام رکھتا ہے۔چاہے کچل کر کھائیں یا ثابت،شربت بنا کر، ہر حالت میں اچھا لگتا ہے۔

ماہرین کے مطابق، یہ ذیابیطس کے مریضوں کے لئے خاص طور پر فائدہ مند ہے۔ذیابیطس یا شوگر ایک ایسا دائمی مرض ہے، جس میں خون کی شوگر مطلوبہ حد سے بڑھ جاتی ہے ۔ذیابطیس لبلبے میں پیدا ہونے والے ہارمون انسولین کی کمی کی وجہ سے ہوتی ہے۔انسولین کی یہ کمی دو طرح کی ہو سکتی ہے۔

امرود کھانے سے بلڈ شوگر کا لیول نہیں بڑھتا ہے۔ فائدے کی بات یہ بھی ہے کہ امرود ذائقے سے بھرپور ہونے کے ساتھ ساتھ کئی طرح کی بیماریوں کی دوا کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

فرکٹوس ایک خاص قسم کی شکر ہے جو کہ پھلوں میں موجود ہوتی ہے ۔ یہ شکر ذیابیطس کے مریضوں اور موٹاپے کا شکار افراد کی صحت پر منفی اثرات مرتب کر سکتی ہے ۔

فائبر

فائبر سے بھرپور ہونے کی وجہ سے امرود ذیابیطس کو بڑھنے سے روکتا ہے اور بلڈ شوگر کی سطح کو ریگولیٹ کرتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ امرود سے قبض کی شکایت دور ہوجاتی ہے جو کہ عمومی طور پر شوگر کے مریضوں کو ہوتی ہے۔

گلائسیمک انڈیکس

امرودمیں گلائسیمک انڈیکس کی کمی ہوتی ہے جس کی مدد سے شوگر کے مریض بار بار بھوک میں آسانی سے کھا سکتے ہیں۔

ایک تحقیق کے مطابق امرود جسم کی شوگر کو جذب کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے اور دوپہر کی خوراک کے لئے موثر ہے۔

وٹامن سی لائیکوپن اور اینٹی آکسڈینٹس

امرود میں وٹامن سی لائیکوپن اور اینٹی آکسڈینٹس کا ذخیرہ ہوتا ہے، اس میں دیگر پھلوں مثال کے طور پر سیب، سنترہ اور انگور وغیرہ کے مقابلے میں بہت کم شوگر پائی جاتی ہے۔

کیلوری

یہ بہت ہی کم کیلوری والا پھل ہے۔ 100 گرام امرود سے صرف 52 کیلوری ہی حاصل ہوتی ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں