siraj 7

ستردن گزرنے کی باوجود تبدیلی کی کوئی اثرات نظر نہیں آرہے. سراج الحق

شوکت علی ریڈیو بونیر
جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سیراج الحق نے کہاہے کہ ستردن گزرنے کی باوجود تبدیلی کی کوئی اثرات نظر نہیں آرہے ،آئی ایم ایف کے سامنے گٹنے ٹھیک کرکے صرف کچکول بدل کرکے طریقہ کار بدل دیا،عدالتیں آسیہ مسیح کیس کے حوالے سے نظرثانی کریں ،ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی تک آسیہ مسیح کو دوسرے ملک نہ بھیجاجائے ،طعنے دینے والے حکمران نے چنددنوں میں مہنگائی کا ریکارڈ قائم کرلیا،سو دن کے دئے گئے ایجنڈہ میں 70 دن گزرگئے مگر عوام کو ریلیف دینے کی بجائے ان سے جینے کا حق چینا جارہاہے ،جماعت اسلامی کی سیاست کا مقصد اللہ کی زمین پر شرعی نظام کا نفاذ ہے .

siraj 2

ان خیالات کااظہار مرکزی امیرسیراج الحق نے المرکز اسلامی سواڑی بونیر میں جماعت اسلامی کے نو منتخب ضلعی امیر محمد حلیم باچا سے حلف لینے کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کے دوران کیا ،تقریب سے سابق صوبائی سپیکر بخت جہان خان ، سابق صوبائی وزیرحبیب الرحمان خان ،نومنتخب امیرمحمد حلیم باچا،انجینئرناصرعلی،حاجی شمشی خان اور ڈاکٹر فضل عظیم نے بھی خطاب کئے،اس موقع پر نومنتخب امیر محمد حلیم باچا نے جماعت اسلامی کے ضلعی امیر کا حلف لیا ،مرکزی امیر سینٹر سیراج الحق نے کہا کہ تبدیلی کے نام پر اقتدار میں آنے والی حکومت عوامی توقعات پر پورا نہیں اتررہی ہے ،حکومت نے عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مہنگائی میں اضافہ کردیا ، جس کی وجہ سے ملک شدید مشکلات سے دوچار ہے ، 71 سال ہوگئے کہ ملک آزاد ہواہے مگر ہم ترقی کرنے کی بجائے تنزلی کی جانب گامزن ہے ،بیرون ممالک میں سبز پاسپورٹ کو عزت کی نگاہ سے نہیں دیکھاجاتا ،یورپ اور دیگر مغربی ممالک نے آسیہ مسیح کی رہائی کے فیصلہ کا خیر مقدم کیاہے جو ہمارے حکمرانوں کے لئے لمحہ فکریہ ہے ،مدینہ کی ریاست کی بات کرنے والے موجودہ حکمرانوں نے اسکی جانب ایک قدم بھی نہیں بڑھایاہے ،انہوں نے کہاکہ ناموس رسالت ؐاس وقت بہت بڑا مسئلہ ہے ،مرکزی حکومت غیروں کو خوش کرنے کی بجائے اپنی ملک کے عوام کی احساسات کا خیال رکھے اور ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی سے پہلے آسیہ مسیح کو ملک سے باہرجانے کی اجازت نہ دی جائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں