nawaz 11

علیمہ خان کا بھی احتساب ہونا چاہییے‘ نواز شریف

اسلام آباد۔
سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ قومی احتساب بیورو(نیب) ن لیگ کی جائیداد کی چھان بین کرتی رہتی ہے، علیمہ خان کی جائیداد کی بھی کرے۔احتساب عدالت میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے سوال کیا کہ یہ کس کے پیسے سے جائیداد بنائی گئی، علیمہ خان کے ذرائع آمدن نہیں، اربوں کی جائیداد کیسی خرید لی، علیمہ خان کی جائیداد کا منی ٹریل کیا ہے، قوم جاننا چاہتی ہے یہ پیسہ کہاں سے آیا کس نے دیا؟سابق وزیراعظم نیسوال اٹھایا کہ وزیراعظم کی بہن علیمہ خان نے دبئی میں اربوں روپے کی جائیداد کیسے بنائی کیا یہ این آر او نہیں ہے؟

سابق وزیراعظم نے سوال کیا کہ عمران خان کے اثاثہ کہاں سے آئے؟ دبئی کے گھر کی کیا کہانی ہے ؟ یہ بھی سب کے سامنے آنی چاہیے۔وازشریف نے کہا کہ میں نے گالم گلوچ اور الزامات کی سیاست کبھی نہیں کی لیکن مجبورا پوچھ رہا ہوں کہ علیمہ خان کی دبئی پراپرٹی کیسے بنائی گئی؟سابق وزیراعظم نے کہا کہ میں ایک کرب میں مبتلا ہوں نہ چاہتے ہوئے بھی آج ایک لمببے عرصے بعد سیاسی بیان دے رہا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ این آر او کا تو سوچ بھی نہیں سکتے اگر این آراو لینا ہوتا تو لندن سے پاکستان نہ آتے۔سابق وزیراعظم نے کہا کہ نواز، شہباز اور مریم سب جیلوں میں ہیں، میں شدید کرب میں مبتلا ہوں، ملک کی خدمت کرنے والوں کو جیلوں میں ڈال دیا گیا ،خدمت کا یہ انعام دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں نے 6 ماہ، سال، دو سال میں لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کے دعوے نہیں کیے، پارٹی رہنماں نے کیے تھے، لیکن پھر بھی اپنے دور حکومت میں لوڈشیڈنگ ختم کی۔نوازشریف کا کہنا تھا ہم نے ملکی معیشت مضبوط کی، ایمرجنگ مارکیٹ میں آئے، ایف اے ٹی ایف بلیک سے گرے اور پھر وائٹ پر لائے، دفاعی شعبے میں چین کے ساتھ ملکر جے ایف 17 ٹھنڈر طیارے بنائے۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا ہمارے دور میں آٹا، گھی، دال اور کھاد سب سستا تھا، کسان خوشحال تھا، اب حالات سب کے سامنے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں